منگل, جولائی 17, 2007

زن کش پاکستانی

اٹلی کے وزیرداخلہ جولیانو آماتو نے پارلیمنٹ میں آپنی تقریر کے دوران فرمایا کہ عورتوں کی مارکٹائی کرنا پاکستانی اور سسلی کی ثقافت کا حصہ ہے۔ پس اٹلی کے سارے اخبارات میں یہ خبر صفحہ اول پر چھپی اور ساتھ ہی سسلی کے ناظم کا بیان کہ سسلی یورپ کا حصہ اور اسے پاکستان جیسے ملک کے ساتھ ملانا ہماری توہین ہے۔
جبکہ پاکستانیوں کو اس خبر کی خبرہی نہ ہوسکی جسکی ایک وجہ ناخواندہ اکثریت ہے اور البتہ جنکو علم ہوا انہوں نے خوشی سے بغلیں بجائیں, چلیں کسی طور پر تو مغرب کی برابری ہوئی، البتہ سفارت خانے کی طرف سے کوئی ردعمل نہیں ہوا ہے۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ وہ بھی اسی گروہ میں شامل ہیں جسے ابھی تک اس بات کا علم نہیں ہے۔

مکمل تحریر  »

جملہ حقوق بنام ڈاکٹر افتخار راجہ. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.

اس بلاگ میں تلاش